غالبؔ کے مشہور اشعار | Ghalib best poetry

دیوانِ غالب سے اسد اللہ خاں کے اشعار کا انتخاب کچھ آسان نہیں۔ لیکن یہاں غالبؔ کے وہ مشہور اشعار (Ghalib best poetry)  کو شامل کیا گیا ہے جو زبان زدِ عام ہیں۔ 

کُھلتا کسی پہ کیوں مِرے دِل

Ghalib Best Poetry
Khulta kisi pe kiun mere dil ka muaamla

کُھلتا کسی پہ کیوں  مِرے دل کا مُعامَلہ

شعروں کے اِنتخاب نے رُسوا کِیا مجھے

Khulta kisi pe kiun mere dil ka muaamla 

Sheroon ke intikhab ny ruswa kiya muje

عشق نے غالبؔ نِکمّا

Ghalib Best Poetry
Ishq ne Ghalib nikamma kar diya

عشق نے غالبؔ نِکمّا کر دیا 

ورنہ ہم بھی آدمی تھے کام کے

Ishq ne Ghalib nikamma kar diya

Warna hum bhi aadmi the kaam ke

جی ڈھونڈتا ہے

Ghalib Best Poetry
Jee dhoondta hai phir wohi fursat ,keh raat din

جی ڈھونڈتا ہے پھر وہی فُرصت ، کہ رات دن

بیٹھے رہیں تصوّرِ جاناں کِیے ہُوئے

Jee dhoondta hai phir wohi fursat ,keh raat din

Bythe rahen tasawwar e janaan kiye howe

عِشق پر زور نہیں' ہے

Ghalib Best Poetry
Ishq par zoor nhi' hai ye wo aatish Ghalib

عِشق پر زور نہیں ‘ ہے یہ وہ آتش غالبؔ 

کِہ لگائے نہ لگے اور بُجھائے نہ بنے

Ishq par zoor nhi’ hai ye wo aatish Ghalib 

keh lagaye na lage aur bujhaye na bane

ہزاروں خواہشیں ایسی کہ

Ghalib Best Poetry
Hazaroon Khwaeshen aisi keh har khwaish pe dam nikle

ہزاروں خوِاہشیں ایسی کہ ہر خواہش پہ دم نِکلے 

بَہُت نِکلے مِرے ارمان لیکن پھر بھی کم نِکلے 

Hazaroon Khwaeshen aisi keh har khwaish pe dam nikle

Bohat nikle mere armaan lekin phir bhi kam nikle

مَحبّت میں نہیں ہے فرق

Ghalib Best Poetry
Muhabbat mein nahi hy farq jeene aur marne ka

مَحبّت میں نہیں ہے فرق جینے اور مرنے کا

اُسی کو دیکھ کر جِیتے ہیں جس کافِر پہ دم نکلے 

Muhabbat mein nahi hy farq jeene aur marne ka

Usi ko dykh kar jeetay hyn jis kafir pe dam nikle

کوئی امید بَر نہیں

Ghalib Best Poetry
Koi Umeed bar nhi aati

کوئی اُمید بَر نہیں آتی 

کوئی صورت نظر نہیں آتی

کعبے کِس منھ سے جاؤ گے غالبؔ

شرم تم کو مگر نہیں آتی

Koi Umeed bar nhi aati

Koi Surat nazar nhi aati

Kaabe kis munh se jao gay Ghalib

Sharm tum ko magar nhi aati

دلِ ناداں تُجھے ہُوا

Ghalib Best Poetry
Dil e nadaan tujhe howa kya hy

دلِ ناداں تجھے ہُوا کیا ہے

آخر اِس درد کی دوا کیا ہے

ہم کو اُن سے وفا کی ہے اُمّید 

جو نہیں جانتے وفا کیا ہے

Dil e nadaan tujhe howa kya hy

Aakhir is dard ki dawa kya hy

hum ko un se wafa ki hai umeed

Jo nhi jante wafa kya hy

اُن کے دیکھے سے جو

Ghalib Best Poetry
Un ke dykhe se jo aa jati hy munh pe ronaq

اُن کے دیکھے سےجو آجاتی ہے مُنھ پہ رونق

وہ سمجھتے ہیں کہ بیمار کا حال اچھّا ہے

Un ke dykhe se jo aa jati hy munh pe ronaq

Wo samajhte hyn keh bemaar ka haal achha hy

ہم کو معلوم ہے جنّت

Ghalib Best Poetry
Hum ko maloom hai jannat ki haqeeqat lekin

ہم کو معلوم ہے جنّت  کی حقیقت لیکن 

دل کے خوش رکھنے کو غالبؔ یہ خیال اچھّا ہے 

Hum ko maloom hai jannat ki haqeeqat lekin 

Dil ke khush rakhne ko Ghalib ye khayal achha hy

تھی وہ اِک شخص

Ghalib Best Poetry
Thi wo ik shaks ke tasawwar se

تھی وہ اِک شخص کے تصّور سے 

اب وہ رعنائی ء خیال کہاں 

Thi wo ik shaks ke tasawwar se

Ab wo ra’na’eyee Khayaal kahan

کیا فرض ہے

Ghalib Best Poetry
Kya farz hai sab ko mile aik sa jawab

کیا فرض ہے سب کو ملے ایک سا جواب

آؤ نہ ہم بھی سیر کریں کوہِ طُور کی

Kya farz hai sab ko mile aik sa jawab

Aao na hum bhi se’ar karain koh e toor ki

غالبؔ بُرا نہ مان

Ghalib Best Poetry
Ghalib bura na maan jo wa'ez bura kahe

غالبؔ بُرا نہ مان جو واعظ بُرا کہے

ایسا بھی کوئی ہے کہ سب اچھّا کہیں جسے؟

Ghalib bura na maan jo wa’ez bura kahe

Aisa bhi koi hai keh sab acha kahain ji’se

رنج سے خُوگر ہوا انساں

Ghalib Best Poetry
Ranj se Khogar howa insaan to mit jata hai ranj

رنج  سے خُوگر ہُوا اِنساں تو مِٹ جاتا ہے رنج

مُشکلیں مُجھ پر پڑیں اتنی کہ آساں ہو گئیں

Ranj se Khogar howa insaan to mit jata hai ranj

Mushkalain mujh par pareen itni keh aasaan ho gayen

اِس سادگی پہ کون

Ghalib Best Poetry
Is saadgi pe kon na mar jaye aey Khuda

اِس سادگی پہ کون  نہ مر جائے اے خُدا

لڑتے ہیں اور ہاتھ میں تلوار بھی نہیں

Is saadgi pe kon na mar jaye aey Khuda

Larte hain aur hath main talwaar bhi nahi

دِل ہی تو ہے

Ghalib Best Poetry
Dil hi to hai, na sang o khisht, dard se bhar na aaye kiun

دِل  ہی تو ہے’ نہ سنگ و خشت ‘ درد سے بھر نہ آئے کیوں

روئیں گے ہم ہزار بار، کوئی ہمیں ستائے کیوں

Dil hi to hai, na sang o khisht, dard se bhar na aaye kiun

Royen gay hum hazar baar, koi hamain sataye kiun

قیدِ حیات و بندِ غم

Ghalib Best Poetry
Qaid e hayat o band e ghum asal me donon aik hain

قیدِ حیات و بندِ غم اصل میں دونوں ایک ہیں

موت سے پہلے آدمی غم سے نَجات پائے کیوں

Qaid e hayat o band e ghum asal me donon aik hain

Mout se pehle aadmi ghum se najaat paye kiun

یہ نہ تھی ہماری قسمت

Ghalib Best Poetry
Ye na thi hamari qismat keh visaal e yaar hota

یہ نہ تھی ہماری قسمت کہ وصالِ یار ہوتا 

اگر اور جیتے رہتے یہی انتظار ہوتا 

Ye na thi hamari qismat keh visaal e yaar hota

  Agar aur jeetay rehte yehi intazar hota

ہے آدمی بجائے خُود

Ghalib Best Poetry
Hai aadmi bjaye khud ik mehshar e khayal

ہے آدمی بجائے خُود اِک محشرِ خیال 

ہم انجمن سمجھتے ہیں، خَلوت ہی کیوں نہ ہو

Hai aadmi bjaye khud ik mehshar e khayal

Hum anjaman samajhte hain, khalwat hi kiun na ho

بَک رہا ہُوں جُنُوں

Ghalib Best Poetry
Bak raha hun junoon mein kya kya kuch

بَک رہا ہُوں جُنُوں میں کیا کیا کچھ 

کُچھ نہ سمجھے خُدا کرے کوئی

Bak raha hun junoon mein kya kya kuch

Kuch na samjhe Khuda Kare koi

شب کو کسی کے خواب

Ghalib Best Poetry
Shab ko kisi ke khwab mein aaya na ho kahin

شب کو کسی کے خواب میں آیا نہ ہو کہیں 

دُکھتے ہیں آج اُس بُتِ نازک بدن کے پاؤں 

Shab ko kisi ke khwab mein aaya na ho kahin

Dukhte hain aaj us bott e nazuk badan ke paoon

کہتے ہیں، جیتے ہیں

Ghalib Best Poetry
Kehte hain, jeete hain umeed pe log

کہتے ہیں ، جیتے ہیں اُمّید پہ لوگ 

ہم کو جِینے کی بھی اُمّید نہیں 

Kehte hain, jeete hain umeed pe log

Hum ko, jeene ki bhi umeed nahi

سُنتے ہیں جو بِہشت کی تعریف

Ghalib Best Poetry
Sunte hain jo behisht ki taareef' sab durust

سُنتے ہیں جو بِہشت کی تعریف’ سب دُرست 

لیکن خُدا کرے وہ تِری جلوہ گاہ ہو

Sunte hain jo behisht ki taareef’ sab durust

Lekin Khuda kare wo teri jalwa gahh ho

گھر میں تھا کیا، کہ تِرا غم

Ghalib Best Poetry
Ghar mein tha kya, keh tera gham usse gharat karta

گھر میں تھا کیا، کہ تِرا گھر اُسے غارت کرتا 

وہ جو رکھتے تھے ہم اک حسرتِ تعمیر، سو ہے

Ghar mein tha kya, keh tera gham usse gharat karta

Wo jo rakhte the hum ik hasrat e tameer, so hai

خاک میں نامُوسِ پیمانِ مَحبّت

Ghalib Best Poetry
Khak mein namoos e pemaan e mahabbat mil gaye

خاک میں نامُوسِ پیمانِ مَحبّت مِل گی

اُٹھ گئی دُنیا سے راہ و رسمِ یاری ہائے ہائے

Khak mein namoos e pemaan e mahabbat mil gaye

Uth gaye dunya se rah o rasm e yari haye haye

ہستی کے مت فریب میں

Ghalib Best Poetry
Hasti ke mat faraib mein aa ja'eo Asad

ہستی کے مت فریب میں آ جائیو اسدؔ

عالَم تمام حلقہء دامِ خیال ہے

Hasti ke mat faraib mein aa ja’eo Asad

Aalam tamam halqa e daam e khayal hai

قطع کیجے نہ تعلُّق

Ghalib Best Poetry
Qata kijye na taalluk hum se

قطع کیجے نہ تعلّق ہم سے

کُچھ نہیں ہے تو عداوت ہی سہی

Qata kijye na taalluk hum se

Kuch nahi hai to adawat hi sahi

مآخذ: دیوانِ غالب، نسخہ فیروز سنز،لاہور